دھرنے کے آگے حکومت نے مونچھیں نیچے کر لیں ۔

اآخرکار دھرنے کے آگے حکومت نے مونچھیں نیچے کر لیں ۔
ملک میں ہر طرف آگ لگی ہوئی ہے ۔اس میں ایک اچھا قدم حکومت کی طرف سے حامد زاہد کے استعفٰی کا آیا ہے ۔جسے سن کر جان میں جان آئی ہے۔کہ شکر ہے کہ حکومت نے اپنی مونچھیں دھرنے کے آگے نیچے کر لی۔ جس طرح ایک پنجابی کی مونچھیں بہت بڑی بڑی تھیں ۔ مزید اُس نے تاؤ دے کر اُوپر کی طرف مڑوڑ رکھا تھا۔جو ایک پٹھان کو بلکل نہ بھائیں ۔ اُس نے پنجابی سے کہا۔ خوچہ مونچھیں نیچی کرو۔اُ س نے کہا ۔جاؤ اپنا کام کرو ۔پٹھان بپھر گیا۔پنجابی سے گتھم گتھا ہونے کے لیے آگے بڑھا۔تو پنجابی نے کہا ۔گتھم گتھا ہونے کے لیے تو آگئے ہو ۔اگر میں میں مر گیا۔تو تو جیل چلا جائے گا۔ا س طرح تمھارے بچے تمھارے دنیا میں زلیل وخوار ہونے کے لیے رہ جائیں گے ۔جاؤ پہلے اپنی بیوی بچوں کا کوئی بندوبست کرو ۔پھر آکر اس مسئلے پر بات کرنا۔پٹھان نے کہا ٹھیک ہے ۔
پٹھان گیا اور بیوی بچوں کو قتل کر کے آگیا ا ور پنجابی سے بولا ۔مونچھیں نیچی کرتے ہو کہ نہیں ۔ورنہ مرنے کے لیے تیار ہو جاؤ۔اور پھر۔۔۔۔۔۔۔ پنجابی نے مونچھیں نیچی کر لیں ۔
اسی طرح زاہد حامد نے اپنا استعفیٰ دے کر اپنی مونچھیں نیچی کر لیں ۔اس طرح پاکستان کی ہزاروں
ما وٗں کو رونے سے بچا لیا۔ یعنی ہزاروں بیٹوں کو بچا لیا۔چاہے وہ دھرنے کی طرف سے ہوں ۔یا پولیس کے اہل کار ہوں ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں