علم دنیا کی سب سے بڑی طاقت ہے .

دنیاوی تعلیم کے بغیر قرآن پاک نہیں سمجھا جاسکتا.
اللہ تعالیٰ نے ہمیں قرآن پاک کے زریعے علم سکھایا.اور اس کے اپنے رسول کو بھیجا.
رَبَّنَا وَابْعَثْ فِيهِمْ رَسُولًا مِنْهُمْ يَتْلُو عَلَيْهِمْ آيَاتِكَ وَيُعَلِّمُهُمُ الْكِتَابَ وَالْحِكْمَةَ وَيُزَكِّيهِمْ إِنَّكَ أَنْتَ الْعَزِيزُ الْحَكِيمُ﴿129
’’ اے ہمارے رب! ان میں انہیں میں سے رسول بھیج جو ان کے پاس تیری آیتیں پڑھے، انہیں کتاب و حکمت سکھائے اور انہیں پاک کرے، یقیناً تو غالب حکمت والا ہے۔‘‘
( سورۃ البقرہ: 129)

إِنَّ الَّذِينَ يَكْتُمُونَ مَا أَنْزَلْنَا مِنَ الْبَيِّنَاتِ وَالْهُدَى مِنْ بَعْدِ مَا بَيَّنَّاهُ لِلنَّاسِ فِي الْكِتَابِ أُولَئِكَ يَلْعَنُهُمُ اللَّهُ وَيَلْعَنُهُمُ اللَّاعِنُونَ (سورۃ البقرۃ 159)
‏ جو لوگ ہمارے واضح دلائل اور ہدايتوں کو جو ہم نے نازل کي ہيں .چھپاتے ہيں باوجوديکہ ہم نے ان لوگوں کے ليے اپني کتاب ميں کھول کھول کر بيان کر ديا ہے ايسوں پر خدا اور تمام لعنت کرنے والے لعنت کرتے ہيں .

اپنا تبصرہ بھیجیں