کیا کوئی ایسی دلیل ہے.کہ میں تجھے بھول سکوں.

کوئی مجھ کو ایسی دلیل دے
کہ میں ٹوٹ کر
ترے نقش آنکھ کی پتلیوں سے مٹا سکوں
کوئی مجھ کو ایسی دلیل دے
کی میں دل سے
تیری عمر بھر کی رفاقتوں کو بھلا سکوں
کوئی مجھ کو ایسی دلیل دے
کی میں عمر بھر
تیری یاد کا کوئی جشن ہی نا منا سکوں
اگر ایسی کوئی سبیل ہے تو پھر آزما
جو نہیں تو پھر
مجھے یاد کر، مجھے یاد آ ۔۔۔۔!!!

اپنا تبصرہ بھیجیں