عمران خان کا ما ضی

عمران خان کا شمار دنیا کے بہترین کرکٹرز میں ہوتا ہے۔ اگرچہ پاکستان نے فضل محمود سے لے کر وسیم اکرم اور حنیف محمد سے لے کر جاوید میانداد اور انضمام الحق تک بہترین کرکٹرز پیدا کیے۔ لیکن کرکٹ کے کھیل میں عمران خان کا شمار ہمیشہ ان کھلاڑیوں سے اوپر کیا جاتا ہے۔

عمران خان کی شخصیت نے نہ صرف پاکستان بلکہ دنیا کے دیگر ممالک کے نوجوانوں میں بھی ایک فاسٹ بولر بننے کا شوق پیدا کیا۔ ان کی نڈر بیٹنگ اور قیادت نے دوسروں کے لیے ایک مثال قائم کی۔

کرکٹ کی معروف ویب سائٹ کرک انفو پر عمران خان کی پروفائل میں انہیں پاکستان سے پیدا ہونے والا غیرمتنازع بہترین کرکٹر اور گیری سوبر کے بعد دنیا کا دوسرا بہترین آل راؤنڈر قرار دیا گیا ہے۔

عمران خان نے اپنے کیرئیر کا آغاز 1971 میں کیا اور تین برس بعد ون کرکٹ میں آئے۔ 1976 میں انہوں نے قومی ٹیم میں مستقل حیثیت اختیار کر لی۔

ایک بہترین فاسٹ بولر کی حیثیت انہیں اس وقت شہرت حاصل ہوئی جب انہوں نے آسٹریلیا میں فاسٹ بولنگ کے ایک مقابلے میں 139.7 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے گیند کرا کر جیف تھامسن اور مائیکل ہولڈنگ کے بعد تیسری پوزیشن حاصل کی۔

1982 میں عمران خان نے 9 ٹیسٹ میچوں میں 62 وکٹیں 13.29 کے اسٹرائیک ریٹ سے حاصل کیں جو کہ ٹیسٹ کرکٹ کی تاریخ میں کسی بھی سال میں کم از کم 50 وکٹیں حاصل کرنے بہترین اسٹرائیک ریٹ ہے۔

پاکستان نے کرکٹ کا واحد عالمی کپ بھی عمران خان کی قیادت میں 1992 میں جیتا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں